Tag Archives: ڈاکٹر تصور حسین مرزا

.اپریل فول نہیں ! جنت کی کفالت 

ازقلم:۔ ڈاکٹر تصور حسین مرزا  اسلام نے خوش طبعی، مذاق اور بذلہ سنجی کی اجازت دی ہے۔ بارہا رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے اپنے اصحابؓ کے ساتھ مذاق فرمایا ہے؛ لیکن آپ کا مذاق جھوٹا اور تکلیف دہ۔۔۔۔۔

ملک شام میں قیامت صغریٰ 

تحریر : ڈاکٹر تصور حسین مرزا  حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے جزیرہ عرب کے باہر اگر کسی ملک کا سفر کیا ہے تو وہ صرف ملک شام ہے۔ اسی سرزمین میں واقع مسجد اقصیٰ کی طرف ایک رات۔۔۔۔۔

ڈپریشن اور ہلدی 

تحریر : ڈاکٹر تصور حسین مرزا  نااُمیدی ، مایوسی ، پرشانی ، اور اُداسی (DEPRESSION ) ان کو ایک ہی خاندان سمجھنے کی بجائے ایک ہی مرض سمجھا جائے تو غلط نہ ہوگا۔ افسوس ناک امر یہ ہے کہ ’’۔۔۔۔۔

کشمیر آزاد ! انڈیا برباد ہوگا 

تحریر : ڈاکٹر تصور حسین مرزا  جب انگریزوں نے گلاب سنگھ کے ساتھ بدنام زمانہ ’’معاہدہ امرتسر‘‘ کے تحت16 مارچ 1846ء کو کشمیر کا 75لاکھ روپے نانک شاہی کے عوض سودا کیا۔ 13 جولائی 1931ء کو سری نگر جیل کے۔۔۔۔۔

آقا ﷺ کی پیدائش کا جشن 

  از قلم :۔ ڈاکٹر تصور حسین مرزا  جن  کے  آنے سے  روشن  زمانہ  ہوا  ایسے نبی ﷺ کی ولادت پہ لاکھوں سلام  حضرت آمنہ رضی اللہ عنہا فرماتی ہیں جب آپ صلی اللہ علیہ وسلم کی ولادت ہوئی تو۔۔۔۔۔

تحریک لبیک یا رسول اللہ کا مشن

  ڈاکٹر تصور حسین مرزا  تحریک لبیک یا رسول اللہ ’’ نہ سیاسی نہ فرقہ بندی‘‘ کی کوئی صورت ہے۔یہ کامل ایمان والوں کی ایک تحریک ہے۔ تحریک لبیک یا رسول اللہ ایک ایسی تحریک ہے جس کی بنیاد آج سے۔۔۔۔۔

کالا یرقان چالاک قاتل 

  از قلم :۔ ڈاکٹر تصور حسین مرزا یرقان کی دو بڑی اقسام ہیں ایک کالا یرقان اور دوسرا پیلا یرقان ۔ یرقان کالا ہو یا پیلا انسانی جگر کو قربانی کا بکرا بننا پڑتا ہے۔ اور قربانی کے بکرے۔۔۔۔۔

سوشل میڈیا اور گستاخانہ مواد

  ۔ ڈاکٹر تصور حسین مرزا دنیا کے نقشہ پر دو ہی ریاستیں ایسی ہیں جنکا وجود ’’ اسلام ‘‘ کے نام پر قائم ہوا۔ دونوں ریاستوں کو معرض وجود میں آنے سے پہلے دنیا نہیں جانتی تھی نہ ہی۔۔۔۔۔

ڈرگ ایکٹ2017 اوردہشت گردی

  از قلم :۔ ڈاکٹر تصور حسین مرزا ہر انسان خواہ وہ پڑھا لکھا ہو یا ان پڑھ ، عورت ہو یا مرد ، بوڑھا ہو جوان، زندگی کے کسی بھی شعبہ سے تعلق ہو اچھی اور معیاری صحت کا۔۔۔۔۔

جعلی ادویات کا خاتمہ

تحریر :۔ ڈاکٹر تصور حسین مرزا اللہ تعالیٰ نے ارشاد فرمایا ہے کہ ’’جس نے ایک انسان کو قتل کیا،اس نے گویا پوری انسانیت کو قتل کر دیا اور جس نے ایک شخص کو بچایا، اس نے گویا پوری انسانیت۔۔۔۔۔