Tag Archives: surraya baber

ثریا بابر انٹرویو

اصلی نام ۔ ثریا جبیں ،،قلمی نام۔ثریا بابر ،ولدیت ۔محمد نسیم خان،ازدواجی حیثیت ۔شادی شدہ (اس چیثیت کو ۲۸،جولائی ۲۰۱۶ء کو ستائیس سال مکمل ہو جائیں گے )،مشاغل۔ امور خانہ داری ، شاعری ، افسانہ نگاری ،نئے نئے لوگوں سے۔۔۔۔۔

چهٹی کی گهنٹی بج چکی تهی

چهٹی کی گهنٹی بج چکی تهی مگر ہم سات دوستوں کا گروپ ابهی تک اسکول میں اپنی کلاس میں موجود تھا ۔مجھے اس گروہ میں آے دس دن ہو چکے تهے۔ اپنے جذبات کے ہاتهوں مجبور ہو کر۔۔۔ پڑھائی پر۔۔۔۔۔

نمکین قطعات

نمکین قطعات ارے ہو ٹل کا کھانا ہے،رقم د وگے تو ملتا ہے میرے پیسوں سے کھایا ہے تو کیا جان بھی لو گے ثریااب بھی وہ کہتے ہیں ارے کیا کھلایا ہے ذرا سی چائے کا اک کپ پلا۔۔۔۔۔

بات یہاں سے شروع ہوئی تھی

ثریا بابر ایک خط کا جواب محترم سرفراز شاھد صاحب :السلام علیکم! ،، سہ ماہی خوش نما ،، میں پہلی بار شرکت کی جسارت کر رہی ہوں ۔عرض یہ ہے کہ میرا مشاہدہ محدود ، فکر کوتاہ ، علم کم۔۔۔۔۔

موت

السلام علیکم۔ میری عمر ۱۴ سال تھی جب ہماری فیملی میں تین اموات اس طرح ہوئیں کہ دوسرے کا سوئم تھا تو پہلے کا چالیسواں ،اور دوسرے کا چالیسواں ہوا تو تیسرے کا سوئم، اس سے پچھلے سال بھی اسی۔۔۔۔۔

ترک ستم کا ارادہ نہیں ہے تجھ سے

غزل ثریا بابر ترک ستم کا ارادہ نہیں ہے تجھ سے تو ایسا بھی وعدہ نہیں ہے پگھل جائے گا سنگ دل دھیرے دھیرے طلب عشق کی بھی تو زیادہ نہیں ہے چلی ہے عجب رسم بے پردگی کی بدن۔۔۔۔۔

ایک حسرت

۔۔ ثریا بابر صبر کا پھل میٹھا ہوتا ہے ۔۔۔ اور ڈاکٹر نے مجھے میٹھا کھانے سے منع کیا ہے ۔۔ سو شب بخیر زندگی۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

مٹھاس

موقع ملے جسے بھی وہ پیتا ضرور ہے شاید بہت مٹھاس ہمارے لہو میں ہے انتخاب۔۔ ثریا بابر۔۔۔۔۔

فون سے ملاقات تک

ثریا بابر جس کی آواز ہے اتنی پیاری خو د و ہ کتنی پیاری ہوگی بالوں کا اک جوڑا ہو گا صندل تن پہ ساری ہوگی پھولوں جیسی ہلکی پھلکی بات بھی لب پہ جاری ہوگی لیکن یہ بھی کس۔۔۔۔۔

نظم ۔۔۔۔ بچھڑنے کے بعد

ثریا بابر کراچی جب ساتھ کسی کا چھوٹے تو دل ٹوٹا ٹوٹا رہتا ہے   ہر شام اس دل کی نگری میں ارماں کا تماشا لگتا ہے اب آج ابھی پیغام آئے جو شاید میرے نام آئے   ہر آہٹ۔۔۔۔۔