سنگدل باپ نے تینوں بیٹیوں کو نہر میں پھینک کر خودکشی کر لی

چوک اعظم (نمائندہ نواے وقت) سگندل باپ نے تین معصوم بچیوں کو سیر کے بہانے عنائیت نہر پر لے جا کر دھکا دے دیا اور خود کو کان پٹی پہپسٹل سے فائر کر کے خود کشی کر لی۔ باپ سمیت تین بچیوں کی نعشیں پولیس نے برآمد کرلیں۔ تفصیل کے مطابق وارڈ نمبر 5 نزد پرانا ہسپتال کے قریب کا رہائشی رانا نوید اقبال والد حاجی رانا محمد اقبال جو گزشتہ صبح اپنی تین بیٹیوں جن میں آٹھ سالہ حانیہ جو کلاس ون کی طالبہ تھی۔چھ سالہ حفظہ کے جی کلاس کی طالبہ تھی اور چار سالہ حادیہ کو موٹر سائیکل پر بیٹھا کر سیر کے بہانے ٹیل منڈا سے عنائیت نہر کی جانب لے گیا بچیوں کو ایک ایک کر کے نہر میں دھکا دے دیا حانیہ جس کی عمر آٹھ سال تھی بہنوں کو نہر میں ڈوبتا دیکھ کر مخالف سمیت بھاگ گئی باپ نے پیچھے سے بھاگ کر اسے پکڑ لیا اور نہر میں پھینک دیا اور خود کو اپنے ہی پسٹل سے کان پٹی پر فائر کر کے خود کشی کر لی جس کی وجوہات قبل ازوقت سامنے نہ آسکیں پولیس کو اطلاع ملتے ہی جاے وقوعہ پر پہنچ گئی ڈسڑکٹ کرائم سین عملہ بھی جاے وقوعہ پر پہنچ گیا جنہوں نے جاے وقوعہ کے تقریباً دو کلومیٹر کے فاصلے سے تینوں بچیوں کی نعشیں نہر سے برآمد کرنے میں کامیاب ہو گئے بچیاں نہر سے نکالنے سے پہلے مر چکی تھیں پولیس نے باپ اور بچیوں کی نعشیں پوسٹ مارٹم کے لیے تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال بجھوا دیں جب کہ کرائم سین عملہ نے پسٹل موٹر سائیکل اور دیگر شواہد اکٹھے کر تحقیقات شروع کر دیں اور ورثائ کو وقوعہ کے بارے آگاہ کیا تو گھرمیں کہرام مچ گیا پوسٹ مارٹم کے بعد نعشیں ورثائ کے حوالے کر دی گیں رانا نوید احمد ان پڑھ نہیں تھا پرایﺅیٹ نجی سکولوں میں بطور ٹیچر فرائض سر انجام دے چکا ہے ذرائع کا کہنا ہے کہ گھریلو لڑائی جھگڑا اور معاشی حالات نے اس نوبت تک پہنچا دیا جبکہ والد کا کہنا ہے ہمارے گھر کا ماحول دینی ہونے پر ایسے حالات پیدا ہونا سمجھ سے بالا تر ہے جب وارڈ نمبر پانچ ان کے گھر سے چار میتیں اٹھائی گئیں تو ہر آنکھ اشکبار تھی سینکڑوں لوگوں نے نماز جنازے میں شرکت کی ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *