ملک بندوق اوربارود کی سیاست کامتحمل نہیں ہوسکتا۔ الطاف شاہد

شہرقائدؒ کوہرطرح کے ہتھیاروں اور خطرناک مجرموں سے پاک کیاجائے

پاک سرزمین پارٹی برطانیہ کے مرکزی صدرچودھری محمدالطاف شاہد نے کہا ہے کہ ملک بندوق اوربارود کی سیاست کامتحمل نہیں ہوسکتا۔کسی کو ہتھیاروں کی مددسے عوام کی سوچ پراثراندازہونے کی اجازت نہیں دی جاسکتی۔شہرقائدؒ کوہرطرح کے ہتھیاروں اورخطرناک مجرموں سے پاک کیاجائے۔ بروقت انصاف کی طاقت سے مجرمان کاراستہ رو کنااورسرکچلناہوگا۔ کراچی کے کچھ مقامات سے پچھلے دنوں اسلحہ کے ڈھیربرآمد ہوناایک بڑاسوالیہ نشان ہے۔اسلحہ چھپانے والے کرداروں کوبے نقاب کرکے قرارواقعی سزادی جائے۔حکومت تلاش کرے ان کے ڈانڈے کہاں جاملتے ہیں۔وہ ایک استقبالیہ سے خطاب کررہے تھے ۔چودھری محمدالطاف شاہدنے مزید کہا کہ عوام نے تشدداورتعصب کی سیاست کومستردکردیا ۔دوقومی نظریے کے تحت ہجرت کرکے پاکستان آنیوالے شخصیت پرست نہیں ہوسکتے۔انہوں نے کہا کہ پاک سرزمین پارٹی نے پاکستانیوں میں سیاسی شعوربیدارکیا،پاکستان کادشمن پاکستانیوں کادوست نہیں ہوسکتا ۔پاک سرزمین پارٹی کے مرکزی چیئرمین مصطفی کمال ،مرکزی صدرانیس احمدقائم خانی اورمرکزی سیکرٹری جنرل رضاہارون نے ملک میں سیاسی استحکام اورفعال جمہوری نظام کی خاطر سیاسی رواداری والے کلچر کوفروغ دیا ۔ انہوں نے کہا کہ پاک سرزمین پارٹی کی قیادت اورسیاست پاکستانیت کی آئینہ دار ہے ،ہمارے قائدین اورکارکنان وطن فروش عناصر کی راہ میں دیوار کی طرح حائل ہیں۔ جولوگ قومی دھارے کی سیاست کرنے کے خواہاں ہیں پاک سرزمین پارٹی ان کیلئے ایک بہترین پلیٹ فارم ہے۔ پاک سرزمین پارٹی کی باضمیر قیادت نفرت اورنفاق کی سیاست کاپرچارکرنیوالے عناصر کاراستہ روکے گی ۔انہوں نے کہا کہ حکومت نے بھتہ خوروں اوراغواء کاروں کوکیوں ڈھیل دی ۔عشرت العبادکوبیرون ملک کیوں جانے دیاگیا ۔انہوں نے کہا کہ عوام نے دشمن ملک کے ایجنڈے کی تکمیل کیلئے سرگرم مٹھی بھرکالی بھیڑوں اورکالے بھیڑیوں کوبخوبی پہچان لیا ،کالے کرتوت والے لوگ قابل گرفت ہیں۔حکمرانوں کی غداروں کے ساتھ رابطے اور ہمدردی ناقابل فہم ہے ۔انہوں نے کہا کہ حکمران جماعت کے سینیٹر پرویز رشید کی لندن میں ایک متنازعہ کردارسے خفیہ ملاقات وضاحت طلب ہے ۔جوکوئی غداروں کاسہولت کار ہے اس کابھی محاسبہ کیاجائے۔

اظہر سعید
شعبہ نشرواشاعت
pak7sarzameen@gmail.com

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *