بھارت کو مذمت نہیں مرمت کی ضرورت ہے ۔محمدناصراقبال خان

بیان بازی کافی نہیں۔رضاایڈووکیٹ،فاروق چوہان ،ندیم اشرف، سلمان پرویز

نامہ نگار/ہیومن رائٹس موومنٹ کے مرکزی صدرمحمدناصراقبال خان ،سیکرٹری جنرل محمدرضاایڈووکیٹ ،سینئر نائب صدورمحمدفاروق چوہان، ندیم اشرف،سلمان پرویز،آصف چٹھہ،تنویرخان،میاں زاہدلطیف،مرکزی نائب صدرمحمداکرم رضوی،صدرمدینہ منورہ سرفرازخان نیازی،صدر کراچی یونس میمن، صدرپنجاب محمد یونس ملک ، ،صدر فیصل آبادندیم مصطفی ،صدر ٹیکسلا سردارمنیراختر،،صدر قصور میاں اویس علی نے کہا ہے کہ متعصب بھارت کو مذمت نہیں مرمت کی ضرورت ہے۔حکمران گفتارتک محدود ہیں جبکہ کشمیر کی آزادی کیلئے ان کے بھرپورکردارکی ضرورت ہے۔حکمرانوں کی بیان بازی کافی نہیں ،جان کی بازی سے بازی پلٹ جائے گی۔بھارت کی بربادی کیلئے ایک مودی کافی ہے،بھارت کے اندربڑھتے ہوئے تشدد، مسلمانوں کی مذہبی آزادی پرقدغن ،بدانتظامی اوربے چینی نے سنگھ برادری کوبھی سرجوڑنے پرمجبورکردیا ۔بھارت کاکشمیریوں کے خون سے ہولی کھیلنا عالمی ضمیر کے منہ پرطمانچہ ہے ۔بھارت کے پاس جموں وکشمیر سے اپنابوریابستر گول کرنے کے سواکوئی چارہ نہیں ۔کشمیریوں کاچارٹرآف ڈیمانڈ سوفیصددرست ہے ،مہذب دنیا ان کی مددکیلئے آگے آئے ۔جوملک کشمیر ایشوپرمجرمانہ طورپرخاموش ہیں انہیں بھارت کاحامی ماناجائے گااورتاریخ انہیں ہرگز معاف نہیں کرے گی ۔مغرب میں سرگرم انسانی حقوق کے علمبردار بھارت کارخ کریں اورکشمیرمیں بھارتی بربریت کے دلخراش مناظر براہ راست دیکھیں ۔وہ ایک اجلاس سے خطاب کررہے تھے ۔محمدناصراقبال خان نے مزید کہا کہ بھارت بندوق اوربارود سے تحریک آزادی کشمیر کوہرگز نہیں دباسکتا ۔بھارت کو امن اور انسانیت کی راہوں میں بارودی سرنگیں بچھانابہت مہنگاپڑے گا۔انہوں نے کہا کہ مودی سرکار افغان حکومت کوگمراہ کرسکتی ہے مگرغیورافغانیوں کوپاکستانیوں کیخلاف دشمنی پرنہیں اکسایاجاسکتا۔پاکستان افغانیوں کادوسراگھرہے اورپاکستان مسلسل کئی دہائیوں تک اپنے افغان بھائی بہنوں کی میزبانی کرتا رہا ہے۔ پاکستانیوں ،افغانیوں،بنگالیوں اورکشمیریوں کے دل ایک ساتھ دھڑکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مودی سرکار کی پاکستان میں بیجااورغیرمعمولی مداخلت کے نتیجہ میں بھارت کے اندر ونی مسائل مسلسل چشم پوشی فطری ہے ۔

فاروق مجید
شعبہ نشرواشاعت

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *