نوکری سے کیوں نکالا؟ ملازم نے دفتر میں موجود افراد کو یرغمال بنا لیا

کراچی: (وائس نیوز گروپ آف میڈیا ) کراچی کے علاقے سپرہائی وے پر نجی کمپنی کے ناراض ملازم نے ساتھیوں سمیت پورے دفتر کو یرغمال بنالیا، ملزم نے دعوٰی کیا ہے کہ اس کے پاس موجود بیگ میں بارود بھرا ہوا ہے اور اگر اسے گرفتار کرنے کی کوشش کی گئی تو وہ خود کو دھماکے سے اڑا لے گا۔
کراچی میں سپرہائی وے کے قریب نجی کمپنی کے ناراض ملازم نے تمام ملازمین کو یرغمال بنالیا، مسلح شخص سلیم شہزاد کا دعویٰ ہے کہ اس کے پاس موجود بیگ میں بارود بھرا ہوا ہے اور اگر اسے گرفتار کرنے کی کوشش کی گئی تو وہ خود کو دھماکے سے اڑا لے گا۔
ملزم سلیم شہزاد کا مزید کہنا ہے کہ وہ اسی کمپنی کا ملازم تھا، دو ماہ قبل کام کے دوران زخمی ہونے پر مالک نے علاج کرانے کی بجائے اسے ملازمت سے نکال دیا اور دو ماہ کی تنخواہ بھی نہیں دی۔ ساتھی ملازمین نے زیادتی پر اسکا ساتھ دینے کی بجائے چپ سادھ لی۔اطلاع ملنے پر پولیس نے فیکٹری کو گھیرے میں لے لیا ہے اور مسلح شخص سے مذاکرات جاری ہیں جبکہ یرغمال افراد اب تک بالکل خیریت سے ہیں۔
ملزم سلیم کا کہنا ہے کہ ملک کا نظام ٹھیک نہیں چل رہا، جمہوریت ملک کو راس نہیں آئی، یرغمال افراد نے میری تنخواہ روکی ہوئی تھی۔ اپنی تنخواہ کے لیے نہیں تمام مزدوروں کے لیے ایسا کر رہا ہوں۔ مزدور طبقہ اس طرح ظلم برداشت کرتا رہے گا۔ملزم کا مزید کہنا ہے کہ وہ چیف جسٹس اور آرمی چیف کے سامنے اپنا بیان دینا چاہتا ہے۔ ملزم نے پولیس اہلکاروں کو خبردار کیا کہ اگر اندر کوئی بھی آئے گا تو صورتحال کے آپ ذمہ دار ہوں گے۔ملزم کا مزید کہنا ہے کہ مجھے کوئی گولی بھی مار دے، فرق نہیں پڑتا۔ ایس ایس پی ملیر منیر شیخ نے ملزم کو یقین دہانی کروائی ہے کہ آپ اپنا مسئلہ بتاؤ آپ کو کوئی گولی نہیں مارے گا۔پولیس نے بم ڈسپوزل اسکواڈ کو بھی طلب کرلیا ہے۔ ڈی ایس پی مظفر عباس کا کہنا ہے کہ کوشش ہے طاقت کے استعمال کے بغیر یرغمالی آزاد ہوں۔ مسلح شخص نے کمپنی کے ملازمین کو میڈیا کے سامنے گرفتاری دینے کا کہا ہے اور اس نے کرش پلانٹ کے منیجر سمیت دو افراد کو یرغمال بنایا ہوا ہے

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *