خاتون کو ریپ کا نشانہ بنانے کے بعد قتل کرنے والا درندہ رنگے ہاتھوں پکڑا گیا، اس کے جسم کے اندر سے کون سا حصہ نکالنے کی کوشش کررہا تھا؟ کوئی انسان تصور بھی نہیں کرسکتا

ماسکو(وائس نیوز) روس میں ایک درندے کو رنگے ہاتھوں گرفتار کر لیا گیا ہے جو ایک خاتون کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنانے اور قتل کرنے کے بعد اس کے جسم کا ایسا حصہ نکالنے کی کوشش کر رہا تھا کہ کوئی انسان ایسی درندگی کے بارے سوچ بھی نہیں سکتا۔ میل آن لائن کے مطابق الیکسی فیلکن نامی اس بدطینت نے ارینا واخروشیوا نامی 30سالہ خاتون کو جنسی زیادتی کے بعد بجلی کے جھٹکے لگا کر قتل کیا اور پھر اس کا پیٹ چاک کرکے اندر سے بچے دانی نکالنے کی کوشش کر رہا تھا جب پولیس موقع پر پہنچ گئی اور اسے رنگے ہاتھوں پکڑ لیا۔رپورٹ کے مطابق تفتیش کے دوران ملزم نے ہولناک انکشافات کیے ہیں۔ اس نے پولیس کو بتایا ہے کہ وہ اس سے پہلے بھی تین خواتین کو جنسی زیادتی کے بعد قتل کر چکا ہے اور 7خواتین کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنا چکا ہے۔ اس کی درندگی کی شکار ہونے والی خواتین میں دو 8سال سے کم عمر بچیاں بھی شامل تھیں۔پولیس کے مطابق 34سالہ ملزم شادی شدہ اور دو بچوں کا باپ ہے۔ اس نے دوران تفتیش بتایا کہ وہ دن بھر شکار کی تلاش میں رہتا تھا اور جیسے ہی کوئی خاتون اسے اکیلی ملتی وہ موقع پا کر اسے جنسی زیادتی کا نشانہ بناڈالتا۔ ارینا کے بارے میں اس نے بتایا کہ وہ اس سے دوستی کرنا چاہتا تھا لیکن وہ اسے نظرانداز کرتی آ رہی تھی۔ واقعے کے روز ارینا اپنے گھر کے قریب ہی اپنی ایک دوست کے فلیٹ پر گئی اور وہ اس کا پیچھا کرتا رہا۔خالی جگہ دیکھ کر اس نے ارینا پر حملہ کر دیا۔ ارینا نے شدید مزاحمت کی اور اسی مزاحمت کے دوران اپنی دوست کو کال ملا کر مد د کے لیے بلانے میں کامیاب ہو گئی تاہم جب تک پولیس اس کی جگہ کا تعین کرکے وہاں تک پہنچی، ملزم اسے قتل کرکے اس کے جسم سے بچے دانی نکال رہا تھا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *