اتحادیوں نے چیئرمین سینیٹ کی نامزدگی کا اختیار نواز شریف کو دے دیا

اسلام آباد: (بیورو چیف پنجاب میاں محمد عمران ندیم سے) حکومت اور اتحادیوں کی مشاورت آخری مراحل میں داخل ہوگئی ، چیئرمین اور ڈپٹی چیئرمین سینیٹ کے انتخاب کے لئے بھاگ دوڑ ، ٹیلی فونک رابطے اور ملاقاتوں میں تیزی آ گئی۔متحدہ رہنماؤں کی بھی نون لیگ کے قائد سے ملاقات، چیئرمین اور ڈپٹی چیئرمین سینیٹ کی نامزدگی کا اعلان کل تک ملتوی، ستاون ارکان کی حمایت حاصل ہوگئی، مشاہد اللہ کا دعوی۔قائد مسلم لیگ(ن) نواز شریف کی زیر صدارت اسلام آباد میں پارٹی کے سینئر رہنماؤں اور اتحادی جماعتوں کا اجلاس ہوا جس میں سینیٹ کے چیئرمین، ڈپٹی چیئرمین کے عہدوں کے لیے موزوں امیدواروں پر غور کیا گیا اور سینیٹ الیکشن کے حوالے سے حکمت عملی مرتب کی گئی ۔ مسلم لیگ ن امیدواروں کا با ضابطہ اعلان کل کرے گی۔اجلاس ،میں عبدالغفور حیدری، میرحاصل بزنجو، پختونخوا میپ کے عثمان کاکڑ اور اعظم موسیٰ خیل شریک ہوئے۔اس موقع پر سابق وزیر اعظم نواز شریف نے کہا چیئرمین اور ڈپٹی چیئرمین سینیٹ کیلئے مشترکہ امیدوار لانا چاہتے۔دوسری جانب سابق وزیر اعظم سے ملاقات میں حاصل بزنجو نے رضا ربانی کے نام کی حمایت کی، میڈیا سے گفتگو میں انکا کہنا تھا، پیپلزپارٹی کو اس تجویز پر اعتراض ہے، کوئی اہم ذمہ داری ملنے کے سوال پر حاصل بزنجو نے مسکراتے ہوئے جواب دیا، دعا کریں ۔ متحدہ پی آئی بی وفد نے بھی نوازشریف سے ملاقات کی، فاروق ستار کا موقف تھا کہ انہیں رضا ربانی پر مکمل بھروسہ ہے۔اجلاس اور ملاقاتوں کے بعد بریفنگ میں مشاہداللہ خان نے بتایا تمام فیصلوں کا اختیار نواز شریف کے پاس ہے، انکا دعویٰ تھا کہ چیئرمین اور ڈپٹی چیئرمین کیلئے نون لیگ کو مطلوبہ سینیٹرز کی حمایت حاصل ہے، کوشش کرینگے فاٹا سینیٹرز کے ساتھ بھی کسی فیصلے پر پہنچ جائیں۔ مشاہد اللہ نے ایک سوال کے جواب میں کہا معلوم نہیں، زرداری صاحب رضا ربانی کے نام پر غور کر رہے ہیں یا نہیں۔ملاقاتوں سے پہلے نواز شریف کی زیر صدارت پارٹی کے سینیئر رہنماؤں کا بھی اجلاس ہوا، ذرائع کا کہنا ہے کہ چیئرمین سینیٹ کیلئے مسلم لیگ ن کو اب بھی پیپلز پارٹی کی طرف سے رضا ربانی کی نامزدگی کا انتظار ہے، رضا ربانی کے نام پر اتفاق نہ ہوا تو ن لیگ کوئی دوسراامیدوار نامزد کرے گی

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *