Monthly Archives: October 2016

وائس آف سوسائٹی ويب نيوز کے دفتر کا افتتاحی اجلاس ہفتہ کے روز شام چار بجے جی میگنولیہ پارک م جی ٹی روڈ میں منعقد ہوا

جس کے مہمان خصوصی عام لوک پارٹی کے چئیر مین ملک نسیم صادق،جبکہ صدارت معروف سماجی شخصیت اور کالمنسٹ جناب عتیق انور راجہ صاحب نے کی تقریب کا باقاعدہ آغاز خلیل رحمن مہار نے تلاوت قرآن مجید سے کیا ،اور۔۔۔۔۔

تلخ حقیقت

  چوہدری ذوالقرنین ہندل۔گوجرانوالہ۔چیف ایگزیکٹیو۔وائس آف سوسائٹی یہ ایک تلخ حقیقت ہے کہ پاکستان بننے سے لے کر اب تک یعنی آزادی کے ستر سال بعد بھی پاکستان کرپشن سے آزاد نہ ہوسکا۔ملک کا ہر طبقہ کسی نہ کسی طرح۔۔۔۔۔

بلاول ویل پلیڈ ؟

حسبِ موقع ازقلم : رقیہ غزل اکثریتی عوام کی رائے ہے کہ بھٹو وہ واحد انسان تھے جو عوام کے حقوق کی بات کرتے تھے درحقیقت یہ بات درست بھی ہے کیونکہ روٹی کپڑا اور مکان کا نعرہ پہلی مرتبہ۔۔۔۔۔

(شہید صحافت ملک محمد اسماعیل خان)

’’بیاد رفتگان‘‘ تحریر :۔عبدالوحید خان، برمنگھم ( یو کے) میرے بڑے بھائی اسلام آباد کے سینئر صحافی ریذیڈنٹ ایڈیٹر پی پی آئی نیوز ایجنسی ملک محمد اسماعیل خان شہید صحافت کے ہم سے جُدا ہو ئے دس سال بیت گئے۔۔۔۔۔

’ ’ معصو مہ ‘‘ را ئے

(لا حا صل ) ضیغم سہیل وا رثی قدرتی بات ہیں ، ہم جن حا لا ت میں ہوں ، امید کی کرن کو کھڑی سے تا ک رکھنے کی عا دت میں لا شعو ر ی طرح مبتلا رہتے۔۔۔۔۔

حکمران اسلام آباد نہیں ا پنی” وصولی ”بندہونے سے ڈرتے ہیں۔سرفرازنیازی

ہمارے کارکنان کیخلاف کریک ڈاؤن کیاگیا تو جعلی اقتدار کاڈراپ سین اٹل ہے پاکستان تحریک انصاف کے مرکزی رہنما سرفرازخان نیازی نے کہا ہے کہ حکمرانوں کواسلام آبادکی بندش سے کوئی سروکار نہیں،انہیں تو ا پنی” وصولی ”بندہونے کاڈر ہے۔اپنے۔۔۔۔۔

کوئٹہ میں موت کارقص،پس چہ باید کرد؟

  مولانامحمدجہان یعقوب ملک میں امن وامان کی صورت حال پہلے کے مقابلے میں بہت بہترہوگئی ہے۔الحمدللہ!نہ اب کراچی پہلے کی طرح آسیب زدہ رہاہے اور نہ ہی کوئٹہ میں خوف ودہشت کاعفریت ننگاناچ رہاہے۔دھماکے کم ہوگئے ہیں۔عوام نے سکون۔۔۔۔۔

ذرائع ابلاغ کیلئے دسواں اسلامی تربیتی ورکشاپ۔

  حفیظ خٹک:(hafikht@gmail.com) شعبہ صحافت معاشرے میں چوتھے ستون کی مانند ہے ۔ لہذا یہ شعبہ دیگر ستونوں کی طر ح اہمیت کا حامل ہے۔ اس شعبے سے وابستہ افراد کو ان کی ذمہ داریوں کی بھرپور انداز میں بجا۔۔۔۔۔

بڑھکیں اور دعوے

میری بات/روہیل اکبر 15اگست 2013کو شام 5بجکر45منٹ پر سکندر نامی ایک شخص اپنے ہاتھوں میں اسلحہ لہرا کراسلام آباد میں ڈرامہ لگا دیتا ہے اور پورے 5گھنٹے ہماری بہادر پولیس اسے پکڑنے میں ناکام رہتی ہے اردگرد کا علاقہ سیل۔۔۔۔۔

پو لیس کلچر کی تبدیلی کے بلند بانگ حکومتی دعوؤں کے برعکس تھانوں میں شریفشہریوں کی پگڑیاں اچھالنا معمول بن گیا۔

جھنگ کے سب سے اہم ترین شہری تھانہ کوتوالی میں عدالتی احکامات جوتے کی نوک پر اڑاتے ہوئے کالعدم مذہبی و انتہا پسند تنظیموں کے سرکردہ افراد کے ایما ء پر جھوٹے،بے بنیاد،حقائق کے برعکس مقدمات کے اندراج پر عوام۔۔۔۔۔