نمکین قطعات

نمکین قطعات
ارے ہو ٹل کا کھانا ہے،رقم د وگے تو ملتا ہے میرے پیسوں سے کھایا ہے تو کیا جان بھی لو گے
ثریااب بھی وہ کہتے ہیں ارے کیا کھلایا ہے ذرا سی چائے کا اک کپ پلا دو گے تو کیا دو گے

قائد اعظم کا مزار۔۔ مگر کس لیے ؟؟؟
کچھ کلیا ں چٹکیں دل میں جو گل یہ کھل گئے تو پھر ؟؟ تمہیں تو اماں پوچھے گی اگر تم مل گئے تو پھر ؟؟
میں نہ جاؤں گی اب قائد اعظم مزار پر وہاں چاچو بھی آتے ہیں وہ پھر سے مل گئے تو پھر ؟؟

اکیس دسمبر دو ہزار بارہ
اکیس دسمبر دو ہزار بارہ تھا کل کا دن تھی حیران میں یہ شور مچا کیا ہے
آئیں جو میری نند پھر جو ہنگامہ ہوا پتہ تب چلا تھا یہ ماجرا کیا ہے

موقع شناسی
کب تک ایسے کھیلو گے کھیل تماشا بنتا ہے دھیرے دھیرے بڑھ کر ہی دل دیوانہ بنتا ہے
ہنستی سی ان آنکھوں میں جب چاہت کے دیپ جلیں آگ بجھانا ٹھیک نہیں ہے آگ لگانا بنتا ہے

انگلش میڈیم والوں کے لیے
اردو نہیں آتی تھی آتے تھے صرف گانے کالج میں ہم تھے پہنچے جی اپنا کل سجانے
کجھ لڑکیاں تھیں naughtyوہ آکے ہم سے بولیں بنتے ہو کفگیر یا کھاؤ گے تازیانے
شرما کے ہم تھے بولے ،جو آپ کی ہو مرضی مطلب سمجھ میں آیا ، جب ہو چکے زمانے

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *